جمعرات, نومبر 29, 2007

یومِ آزادی ( Independence Day)

یومِ آزادی

آزاد یہ زمیں ہے آزاد یہ گگن ہے

آزاد ہیں ہوائیں آزاد یہ چمن ہے

دامن میں بھر کے اپنے خوشیاں ہزار لایا

تریخ ہند میں یہ دن یاد گار آیا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

آزاد ہم ہوئے تھے تفریقِ من و تو سے

آزادیاں ملیں ،جب سینچی زمیں لہو سے

اہلِ وطن کو جینا تب سازگار آیا

تاریخ ِہند میں یہ دن یاد گار آیا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

باپو کی آس ہے یہ نہرو کا خواب ہے یہ

آزاد کی تمنّا اک آفتاب ہے یہ

بامِ افق ہے روشن اک زرنگار آیا

تاریخ ِہند میں یہ دن یاد گار آیا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

راتیں وہ ڈھل چکیں ہیں راہیں کھلی ہوئی ہیں

کچھ دور منزلیں ہیں آواز دے رہی ہیں

اجڑے ہوئے چمن میں بن کر بہار آیا

تاریخ ِہند میں یہ

دن یاد گار آیا


کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں