بدھ, نومبر 21, 2007

برس رہا ہے پانی چھم چھم (pitter patter rain drops)


برس رہا ہے پانی چھم چھم

موسم نے کروٹ ہے بدلی
آسمان پر چھائی بدلی
سر سر سر سر ہوا چلی

بادل کے رتھ گھوڑے دوڑے
بجلی نے ہتھ گولے چھوڑے
برسے سب کے سر پہ ہتھوڑے

کڑکڑ کڑ کڑ بجلی چمکی
منّی ڈر کر گھر میں دبکی
اب تو سٹّی گم ہے سب کی

سوندھی سوندھی مہک اٹھی ہے
پیڑ پہ چڑیا چہک اٹھی ہے
ساری دھرتی لہک اٹھی ہے

پل بھر میں بدلاہے موسم
گرمی کا اب ہوا قہر کم
برس رہا ہے پانی چھم چھم



کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں