ہفتہ, جنوری 31, 2009

بدھ, جنوری 28, 2009

laughter خیال پارے


لافٹر چینل 

ٹیلیویژن کے مختلف چینلوں پر ان دنوں تفریحی پرو گراموں کی باڑھ سی آ گئی ہے ناچ گانوں اورفلمی نغموں کی پیشکش سے قطع نظر چند صحتمند پروگرام بھی نر کئے جا رہے ہیں ان میں لافٹر چینل کو شامل کیا جا سکتا ہے ۔ انسان اب روزمرّہ کی مصروفیات اور ذہنی تناؤ کے عالم میں ہلکی پھلکی تفریح کی تلاش کر تا ہے اور یہ اسے اس قسم کے پروگراموں میں مل جاتی ہے جو حالاتِ حاضرہ پر طنز و تشنیع کے ذریعے اس کے لئے نفسیاتی طور پر کتھارسس کا ذریعہ بھی ثابت ہو تی ہے اسی لئے لافٹر چینل نے بہت کم وقت میں زبردست مقبولیت حاصل کر لی ہے۔

پروگرام میں زندہ دل کرکیٹیر نو جوت سدّھو اور معروف اینکر شیکھر سمن جو متعدد کامیڈی سیریلوں میں اپنی بے مثال اداکاری کے جو ہر دکھا چکے ہیں ۔ اس کے علاوہ اس پروکرام کی خصوصی دلکشی پری زاد بھی ہے ۔ لافٹر چینل نے مختلف علاقوں کے میمیکری پیش کر نے والے اور مزاحیہ اداکاری کی صلاحیت رکھنے والوں کے لئے گو یا ایک پلیٹ فارم مہیّا کر دیا جہاںکئی چہرے اپنی شناخت قائم کر چکے ہیں ۔ ان مین راجیو سری واستو،سنیل پال،احسان قریشی قابلِ ذکر ہیں ۔ 

ان فنکاروں نے مختلف فلمی اداکاروں اور سیاسی لیڈروں کی نقل کر کے سیاست اور فلمی دنیا کو نشانہ بنایا ہے ۔یہ ٹی وی کے مزاحیہ اداکار اپنے ساتھ اپنے علاقے کے کچھ کرداربھی لے کر آ ئے ہیں جن کی نقالی کر کے انھوں نے ان کی پہچان قائم کر لی ہے ۔ ان میں راجیو شری واستو کا گجو دھر بھیّا اور سنیل پال کا نورا اپنے مخصوص انداز سے پہچانے جا تے ہیں ۔ 

لافٹر چینل کی ایک خصوصیت یہ ہے کہ اس کے ذریعے پاکستان کے کئی با صلاحیت اداکار بھی یہاں آ ئے اور ایک نیاماحول پیدا کیا اس کے ساتھ ہی ایک بات جو محسوس کی جاتی رہی کہ ان فنکارون نے بعض اوقات مزاح کو سیکس اور ابتذال سے جوڑ کر بد مزگی بھی پیدا کی ۔جس طرح مراٹھی ظرافت میںفحاشی اور بھونڈے پن کی مثالیں ملتی ہیں ان فنکاروں نے لا فٹر چینل کے ذریعے ان چیزوں کو بھی پیش کیا ہے ۔ مجموعی طور پر یہ ایک تفریحی پروگرام ہے اپنے مقصد میں کامیاب ہے اور یہی اس کی مقبولیت کا سبب بھی ہے ۔

جمعرات, جنوری 22, 2009

Urdu poems for children, نظم) یومِ جمہوریہ )


Yome Jamhooriya  
یومِ جمہوریہ 
Republic Day ( Urdu Poem) 
by :Muhammad Asadullah


Mit Hi Jaiyen Ge Zul O Sitam Ke Nishan 

Kha Gai YEh Zameen Zulm Ke Aasman

 Jal RaHa Hai Yahan Amn Ka Ik Diya


                                         Yome Jamhooriya, Yome Jamhooriya

Lab Yeh Aazad Hain,Fikr Bedar Hai

Rastaq Ab Hawaon Ka Hamwar Hai

Manzilon Ki Taraf Chal Pada Qaafila

                                          Yome Jamhooriya, Yome Jamhooriya

Hum Usoolon Pe Insaniyat Ke Jiyen 

Ho Vo Sooraj Ke Zarra Sabhi Ek Hain 

Aasman Meharban Sub Pe Hai Ek Sa.


                                         Yome Jamhooriya, Yome Jamhooriya

سوموار, جنوری 19, 2009

Shehar Nama ( Urdu poem)


Shehar Nama

(poem)


Kisi ka yahan koi chehra nahin hai
Mukhauta agar hai to pehchan hai

Barson se wo ajnabee is shehar mein
Chehre ko le kar pareshan hai.




Ajnabee is shehar mein
(Ghazal)

Lutf pehchan ka bhi to lo ajnabee
Hum se mil mil ke yun na bano ajnabee.

Ajnabeepan hai sheva mere shehar ka
Aa gaye ho to ban kar raho ajnabee.

Zindagi hai ki bastee kisi ghair ki
Tum shanasa sahi phir bhi ho ajnabee.

Hum shanasayion ke bharam men jiye
Khul na paya ke aakhir hain do ajnabee.

Seh na pao ge tanhaiyan bazm ki
Is se behtar hai  Tanha  raho ajnabee.


humorous urdu poems


ہزل 
محمّد اسدا اللہ 

جو تے کھاتے ہیں مسکراتے ہیں 
دیکھ ہم کس طرح نبھاتے ہیں

کل لگا آ ئے باس کو مکّھن 
چونا دشمن کو اب لگاتے ہیں 


ڈفلی اس کی ہے راگ اپنا ہے 
دیکھئے کی انعام پا تے ہیں
کل تو آ نکھیں چرایا کر تے تھے 
دانت کیوں آ ج وہ دکھا تے ہیں
 


کل فقیروں میں ہم کو گنتے تھے 
اب رفیقوں میں ہم کو پا تے ہیں 


مال کھانے کی ہے یہ تیّاری 

غم جو جنتا کا آ ج کھاتے ہیں 


اپنا دن بھی ہے رات جیسا ہی 
رات کو بھی وہ دن بناتے ہیں

اتوار, جنوری 18, 2009

Laughing Poetry (Urdu )


Laughing Poetry
My Choice 


Jan Tum par Nisar Karta hoon
Sharm Tunm Ko Magar Naheen Aati 

Mirza Galib

 
The Who Bhi Din Ke Khidmate Ustad Ke Ewaz 
Dil Chahta Tha Hadiyae Dil Pesh Kijiye 
Badla Zamana Aisa ke Ladka Pas Az Sabaq 
Kahta Hai Master Se Ke Bill Pesh Kijiye 

 Allama Iqbal 

Raqeebon Ne Rapat Likhwai Hai Ja Ja Ke Thane Mein 
Ke Akbar Nam Leta Hai Khuda Ka Is Zamane Mein 

Akbar Ilahabadi 

Potta Tirpat hai ,Half Signal Hai 
Munh Pe Chechak Hai ,Sada Sitafal Hai 

Suleman Khateeb 

Biwi Ki Khwahishat , Are bap , kya Karoon
Mange Hai Kainat ,Are bap, Kya Karoon

Nazim Ansari 

Kud Aap Kahna Pad Raha Hai
Pun Ko Pap Kahna Pad Raha Hai
 Khuda Rakhe Ilekshan Ko Salamat
Gadhon Ko Bap Pad Raha Hai

Nazir Khayami

 Chor Aaye Ga To Shar minda Kry Ga Jan Rakh 
Sharm Se Bachne Ko Ghar Mein Qeemti Saman Rakh 
T.V. Par Iqbal Ka Qaumi Tarana Phir Baja 
Phir Kaheen Shayad Hoa Firqa Warano Fasad 

Dilip Singh 




ہفتہ, جنوری 17, 2009

Aisa Ho Jaisa Hai Guman A Poem

Aisa Ho Jaisa Hai Guman  

A Poem for Children

Aisa Ho Jaisa Hai Guman 

Duniya Ho Yeh Bagh Saman 

Phool Parindon Ki Manind 

Chah ke Mahke  Har Insan  

Rahe shaher Mein Amn o Aman 

Log Bhi Sare Aalishan 

Har Chehre Par Saji Rahe 

Khili Khili Si Ik Muskan 

A Poem for children (Urdu)ایسا ہو جیسا ہے گمان

ایسا ہو جیسا ہے گمان
(نظم )
محمّد اسد اللہ 
.....................................................
ایساہو جیسا ہے گمان

دنیا ہو یہ باغ سمان

پھول پرندوں کی مانند

چہکے مہکے ہر انسان 




رہے شہر میں امن و امان 

لوگ بھی سارے عالی شان 

ہر چہرے پر سجی رہے 

کھلی کھلی سی اک مسکان 




ایسے بھی ہو تیر کمان 

کام کرے جادو سمان

ر کے سب کنگالوں کو 

پل بھر میں کر دے دھنوان




ایسا بھی ہو ایک مکان

جس میں خوش ہو ہر انسان 

جب بھی سجا ہو دستر خوان

رنگ برنگے ہو پکوان


جمعہ, جنوری 16, 2009

Urdu Short Story - Chhoot Ka Chakkar


فرعون پشت پر لئے لشکر ہے کیا کریں غزل



غزل

محمّد اسد اللہ

 

فرعون پشت پر لئے لشکر ہے کیا کریں 

بے معجزہ عصا ہے ،سمندر ہے کیا کریں 

ہاں !دستِ احتیاط میں خنجر ہیں کیا کریں 

دشمن ہماری ذات کے اندر ہے کیا کریں 

شیشے سا دل لئے ہوئے نکلے تو ہیں مگر 

ہر رہگزر کے ہا تھ میں پتّھر ہے کیا کریں 

اس سمت سے کسی طرح ہٹتی نہیں نظر 

وہ سب سے اس جہان میں ہٹ کر ہے کیا کریں 

قد آ وری کے سر ہے کڑی دھوپ کا قہر 
یہ آتشِ چنار مقدّر ہے کیا کریں

Urdu Ghazal (English Script )

Ghazal (Urdu)

Firaon Pusht Par Liye Lashkar Hai Keya Karoon 
Be Moajaza Asa Hai,Samandar Hai Keya Karoon

Han Daste Ihtiyat Mein Khanjar Hai Keya Karoon 
Dushman Hamari Zat ky Andar Hai Keya Karoon 


Shishe Sa Dil Liye Hue Nikle To Hain Magar
Har Rahguzar Ke Hath Mein Patthar Hai Keya Karoon 
 

Us Samt Se Kisi Trah Hatti Nahin Nazr
Voh Sab Se Is Jahan Mein Hat Kar Hai Keya Karoon 

Qad Aawari Ke Sar Hai Kadi Dhoop Ka Qahar 
Yeh Aatishe Chinar Muqaddar Hai Keya Karoon 



سوموار, جنوری 12, 2009

Urdu Poem ..Kahan Aa Gaye Tum?


کہاں آ گئے تم؟ 
نظم 
محمّد اسد اللہ 

یہاں کو ئی زمیں ایسی نہیں ہے
جو تمہارے آ نسوؤں کو اپنے دامن میں جگہ دے 

ہر طرف سنگِ مر مر کا فرش ہے 
پھوٹ کر رونا نہیں ہے تمہیں ،
ٹوٹ کر بکھرو نہیں 
خود کو سنبھالوذرا !

یہاں چارہ گر کے ہا تھوں میں
مرہم نہیں سنگِ ملامت ہے 

لو ٹ آ تی ہے ہر صدا 
دیوار و در سے سر پھوڑ کر 

کسی دیوار میں کو ئی دریچہ نہیں ہے 
کوئی در یہاں پر کھلا نہیں ہے 

یہ کس جا دو کی ما ری
زرد بستی میں تم چلے آ ئے ؟


بدھ, جنوری 07, 2009

A Poem

Kahan Aa Gaye Tum

Poem   By. Muhammad Asadullah


Kahan Aa Gaye Tum
Yahan Koi Zameen Aisi Nahin Hai
Jo Tumhare Aansuon Ko
Apne Daman Mein Jagah De


Har Tatraf Sange Mar Mar Ka Farsh Hai
Phoot Kar Rona Nahin Hai Tumhen
Toot Kar Bikhro Nahin
Khud Ko Sambhalo Zara!

Yahan Charagar Ke Hathon Mein
Marham Nahin Sange Malamat hai
Uski Zuban Hai ke Talwar Ki Dhar Hai

Laot Aati Aati Hai Har Sada
Diwar o Dar Se Sar Phod Kar
Kisi Diwar Mein Koi Dareecha Nahin Hai
Koi Dar Yahan Par Khula hua Nahin Hai


Yeh Kis Jadoo Ki Mari
Zard Basti Mein Aa Gaye Tum?

جمعرات, جنوری 01, 2009

غزل۔۔ یہ اندھیرے کہاں سے آ ءے ہیں Ghazal ..Yeh Andhere Kahan Se Aaye Hain



غزل

ہم تو سورج نکال لائے تھے 
یہ اندھیرے کہاں سے آئے ہیں 

توڑ آ ئے تھے ہم سبھی بندھن 
پھر یہ گھیرے کہاں سے آ ئے ہیں 

سر پہ الزام کی جگہ ان کے 
پر سنہرے کہاں سے آئے ہیں 

کھو گئے ہیں کہاں سبھی اپنے 
تیرے میرے کہاں سے آئے ہیں 

کون بکھرا گیا ہنسی اپنی 
یہ سویرے کہاں سے آئے ہیں 

سوچ کا ہے ہجوم ذہنوں پر 
اتنے ڈیرے کہاں سے آ ئے ہیں

Ghazal

Hum To Suraj Nikal Lae The 
Yeh Andhere Kahan Se Aaye Hain

Tod Aaye The Hum Sabhi Bandahan 
Phir Yeh Ghere Kahan Se Aaye Hain

Sar pe Ilzam Ki Jagah Un Ke 
Par Sunahare Kahan Se Aaye Hain

Kho Gaye Hain Kahan Sabhi Apne
Tere Mere Kahan Se Aaye Hain

Kaon Bikhra Gaya Hansi Apni
Yeh Savere Kahan Se Aaye Hain

Soch Ka Hai Hujum Zehnon par 
Itne Dere Kahan Se Aaye Hain