منگل, اگست 12, 2008

poem on independence celebration


صبحِ زر نگار
محمّد اسد اللہ
،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،،

صبحِ زر نگار آ ئی، لا ئی جشنِ آ زادی


جشنِ یومِ آزادی ،جشنِ یومِ آزادی


لالہ رو زمیں اپنی ،نیلگوں گگن اپنا


یہ گلاب اپنے ہیں، نکہتوں کا بن اپنا


منزلوں کے دامن میں راحتوں کا دھن اپنا


یہ سبھی کامامن ہے ، گلشنِ وطن اپنا


دے رہا ہے ہر ذرّہ اس کا درسِ یکتائی


جشنِ یومِ آزادی ،جشنِ یومِ آزادی





چاہتوں کی گہرائی اور ملن مبارک ہو


امن کے پرستارو! یہ چلن مبارک ہو


نعمتوں کی ارزانی انجمن مبارک ہو


جشنِ یومِ آزادی ، اے وطن مبارک ہو


اے وطن مبارک ہو ہر طرف یہ شادابی


جشنِ یومِ آزادی ،جشنِ یومِ آزادی


صبحِ زر نگار آ ئی، لا ئی جشنِ آ زادی


جشنِ یومِ آزادی ،جشنِ یومِ آزادی

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں