جمعہ, اکتوبر 26, 2007

سرکس (Circus)

سرکس

شہر میں سرکس آیا ہے

کھیل تماشے لایا ہے

ہاتھی اونٹ اور گھوڑے ہیں

سب ہی یوں تو بھگوڑے ہیں

سب کو پکڑ کر لایا ہے

شہر میں سرکس آیا ہے

اڑتی اچھلتی کار بھی ہے

کھیلوں کی بھر مار بھی ہے

سارے کھلاڑی اور جوکر

تار پہ چلتے ہیں سرسر

شہر امڈ کر آیا ہے

شہر میں سرکس آیا ہے

شیر بھی ہے اور بکری بھی

کتّوں کی اک ٹولی بھی

ایک بڑا سا بھا لو ہے

کچھ اس کے ہمجولی بھی

بھان متی کا کنبہ ہے

جو سرکس نے جوڑا ہے

ہاتھی پوجا پاٹھ کرے

بندر بندر بانٹ کرے

بھالو ناچ دکھاتا ہے

طوطا توپ چلاتا ہے

سبھی دکھاتے ہیں کرتب

جوکر اب گرا یا تب

سب کے من کو بھایا ہے

شہر میں سرکس آیا ہے


کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں