منگل, مارچ 23, 2010

Naat .. Aamir Usmani نعت ۔۔۔ عامر عثمانی ۔۔

<><><><><><><><><><><><><><><><><><><><>
 نعت 
,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,,
عامر عثمانی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 بڑی مشکل یہ ہے جب لب پہ تیر ذکر آ تاہے
دماغ و دل میں اک خوابیدہ محشر جا گ جا تا ہے

ابل پڑتے ہیں سوتے بیکراں جذبے محبّت کے
ابھر آ تے ہیں خا کے تیری صورت تیری سیرت کے

کبھی جی چاہتا ہے تیری معصومی کے گُن گا ؤں
کبھی جی چاہتا ہے سادگی کا ذکر کرڈالوں

کبھی کہتا ہے دل زہد و ورع سے ابتدا کر لوں
کبھی کہتا ہے دل دریا دلی کا تذکرہ کر لوں

کبھی ذکرِ جمالِ دلنشیں پر جی مچلتا ہے
کبھی عہدِ رسالت شوق کے سانچے میںڈھلتا ہے

کبھی قصّہ سنانا چاہتا ہوں تیرے بچپن کا
بہت سادہ، بہت معصوم سنجیدہ لڑکپن کا

کبھی حیرت فزا غزوات پھر جا تے ہیں آ نکھوں میں
حنین و بدر کے دن رات پھر جا تے ہیں آ نکھوں میں

کبھی تیری صداقت ولولہ انگیز ہو تی ہے
کبھی تیری رواداری تحّیر خیز ہو تی ہے

کبھی تیرے کمالِ صبر پہ دل وجد کر تا ہے
تخیل میں تِرے اوصاف کا پر چم ابھرتا ہے

کبھی تیری جفاکو شی پہ آنکھیں ڈبڈباتی ہیں
تصوّر سے تِرے فاقوں کے، نبضیں چھوٹ جا تی ہیں

کبھی جلوے ابھرتے ہیں تیری مہماں نوازی کے
یتیموں ،بے سہاروں ،بے کسوں کی چارہ سازی کے

مسلسل کشمکش ہو تی ہے الفاظ و معانی میں
میں بہہ جا تا ہوں اک خاموش طوفاں کی روانی میں
کہوں کیاکس طرح یہ فیصلہ مجھ سے نہیں ہوتا
خود اپنی الجھنوں کا تجزیہ مجھ سے نہیں ہو تا
<><><><><><><><><><><><><><><><><><><>

3 تبصرے: