جمعرات, ستمبر 18, 2008

poems


نثری نظمیں

محمّد اسد اللہ  

1

جیب بھر کر

 کبھی خالی کر کے 

وہ دکھا تا ہے

یہ دنیا کیا ہے

   

2

اس قدر کھو یا کہ اب 

پا تے ہو ٔے لگتا ہے یوں 

کچھ تو ہے جو کھو رہا ہوں 

1 تبصرہ:

  1. Aap se 'one-way communication' karte hue koft hoti hai. Shaayad aap khud keliye hi likhte haiN.

    Khair, KHuda Haafiz.
    http://urdudaan.blogspot.com
    (urdudaan@yahoo.com)

    جواب دیںحذف کریں