Thursday, February 19, 2009

A POEM IN URDU آئینہ خانے کی تنہائی


آئینہ خانے کی تنہائی 
(نظم)
محمّد اسد اللہ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہماری سوچ
ان راہوں پہ چلتی ہے 
جہاں چاندی برستی ہے

قدم 
ان وادیوں سے
اب گریزاں ہیں 
جہاں کچھ بھی نہیں ملتا

فقط اک آئینہ خانے کی تنہائی 
ہماری ذات کا نوحہ سناتی ہے
جسے بازار میں 
برسوں ہو ئے
ہم بیچ آ ئے ہیں !


2 comments:

  1. Hello. This post is likeable, and your blog is very interesting, congratulations :-). I will add in my blogroll =)THANX FOR

    MAKING SUCH A COOL BLOG


    Let me share with you a great resource,

    Urdu Rasala

    if you are searching for Some Great urdu literature Online And want to read Great urdu novels And poetry on one place then check this out

    ReplyDelete
  2. Thanks for the comment and sharing my blog
    M. Asadullah

    ReplyDelete