جمعہ, اپریل 02, 2010

parents responsibilities Urdu .. والدین کی ذمّہ داریاں


ابتدائی سطح پر و الدین کی ذمّہ داریاں
::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::
زبیدہ بیگم، ناگپو
ر

اااااااااااااااااااااااااااااا
ءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءء
اس پوسٹ کو کسی اخبار یا رسالہ میں تقل کرنے کی صورت میں بلاگ کا پتہ 
  دینا لازمی ہے http://bazmeurdu.blogspot.com/

ءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءءء

موجودہ دور سائنس اور تکنولوجی کی ترقّی کے سبب علم و ہنر کا سنہرا دور کہلانے کا مستحق ہے ۔ریل ،جہاز ،کمپیوٹر اور انٹر نیٹ جیسی سائنسی ایجادات نے زندگی کو برق رفتار بنا دیا ہے ۔
نئی نسل بھی ذہنی اعتبار سے بہت تیز ہے۔یہ سب علم کی کار فرمائی ہے ۔ جو لوگ اس بات کو سمجھتے ہیں وہ علم کے حصول میں سر گرم ہیں۔ اپنے بچّوں کو زیورِ تعلیم سے آراستہ کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتے ۔ ان حالات میں طریقۂ تعلیم میں بھی تبدیلی کی ضرورت ہے ۔حکومتِ وقت اسی ضرورت کے پیشِ نظر مناسب اقدامات اٹھا رہی ہے ۔ہمارا المیہ یہ ہے کہ ہم وقت کے تقاضوں کو سمجھ نہیں پا رہے ہیں یا ان کو پورا کرنے کے لئے ذہنی طور پر تیّار نہیں ہوئے ہیں ۔ عام زندگی کے دیگر معاملات کی طرح ہم اپنے بچّوں کے تربیت کے معاملہ میں بھی اسی لکیر کو پیٹ رہے ہیں ۔ ہماری اسی غلط سوچ کا نتیجہ ہے کہ ہمارے بچّے ابتدائی تعلیم کے زمانہ میں لا پرواہی کا شکار ہو جاتے ہیں او رپھر اعلیٰ تعلیم سے محرو م ہو جاتے ہیں ۔

والدین کے ضروری ہے کہ وہ بچّوں کی ابتدائی تعلیم پر خصوصی توجّہ دیں ۔اگر کسی طالبِ علم کی ابتدا کمزور رہی تو وہ بنیادی چیزوں کو سمجھ نہیں پاتا ۔اسی لئے اسکول کے کام پورے نہ کر پانے کی وجہ سے اس میں تعلیم سے دلچسپی کم ہونے لگتی ہے اکثر نفرت اور ڈر پیدا ہونے سے وہ اسکول سے دور رہنے کی کوشش کرتا ہے ۔بچّہ اپنے اسباق کو اگر سمجھ لیتا ہے تو تعلیم سے اس کی دلچسپی برقرار رہتی ہے ۔ اسی لئے والدین کو اپنے بچّوں کے اس قسم کے مسائل حل کرنے کی کوشش کرنی چاہئے ۔ بچپن ہی سے انھیں محنت کا عادی بنائیں ۔ انھیں خود پڑھائیں اور مخصوص مضامین کے معاملہ میں اگریہ ان سے ممکن نہ ہو تو مناسب لوگوں کی مدد حاصل کریں ۔
گھرکے بڑے بچّے بھی اس سلسلہ کار آمد ثابت ہو سکتے ہیں ۔والدین اگر بچوں کی ابتدائی تعلیم پر توجّہ دیں تو وہ لائق بنیں گے ۔ہم بچوں کو اسکول کے حوالے کرکے بے فکر ہوجاتے ہیںجبکہ مذہبی نقطۂ نظر بھی ان کی تعلیم و تربیت ہمارا فرضِ اوّلین ہے۔ بچپن ہی سے دینی اور اخلاقی تعلیم سے رغبت پیدا کی جائے تو بچّے بڑے ہو کر ہر گز بے راہ روی کا شکا ر نہ ہوں گے ۔نئی نسل کی گمراہی کی ایک اہم وجہ یہ بھی ہے کہ اسے گھرسے جو تعلیم و تربیت بچپن میں حاصل ہونی چاہئے وہ اس سے محروم ہے ۔ والدین اور اساتذہ سے درخواست ہے کہ وہ اپنی ذمّہ داریوں کو محسوس کرتے ہوئے بچوں پر خوب توجّہ دیں اور ان کی سر گرمیوں پر نظر رکھیں ۔ اﷲ تعالیٰ ہمیں اپنی اولاد کی اچھّی تعلیم و تربیت کی توفیق عطا فر مائے ٭

1 تبصرہ:

  1. مرض کی ہلکی سی نشاندہی کی گئی ہے ۔ نہ مرض کی وجوہ کا تجزيہ کيا گيا ہے اور نہ کوئی سادہ قابلِ عمل نُسخہ تجويز کيا گيا ہے

    جواب دیںحذف کریں